Powered by UITechs
Get password? Username Password
 
 ہوم > سوالات > معاشرتی مسائل
مینو << واپس قرطاس موضوعات نئے سوالات سب سے زیادہ پڑھے جانے والے سوال پوچھیے  

حدیث ، قرآن اور فتوے بازی
سوال پوچھنے والے کا نام Muhammad Iqbal
تاریخ:  11 اکتوبر 2005  - ہٹس: 2702


سوال:
آجکل دینی حوالے سے کسی سے بات کریں تو وہ آگے سے حدیث پیش کرتے ہیں۔ جب یہ توجہ دلائی جائے کہ یہ حدیث تو قرآن مجید سے متضاد ہے تو وہ ناراض ہو جاتے ہیں اور کفر کا فتوی لگانا شروع کر دیتے ہیں۔

جواب:
یہ ہمارے ہاں تربیت نہ ہونے کی وجہ سے ہے ۔ ہم اس بات کے عادی ہی نہیں رہے کہ دوسروں کی بات بھی صحیح ہو سکتی ہے ۔ اختلاف کو سلیقے سے حل کر نا ہمار ا شیوہ نہیں۔ مذہب کی جزیات اور علما آئمہ کی آرا کوبھی ہم نے عین دین بنا لیا ہے ہم سمجھنے ‘سمجھانے،ڈائیلاگ کرنے،بات سننے ،سنانے کے ببجائے اس میں سے فتوی بر آمد کرتے ہے ۔ اور فتوی لگا کر فارغ ہو جاتے ہیں۔ یہ تربیت کا فقدان ہے ۔ اس کا اسلام یا دین سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔ اسلام اور دین نے ہمیں جو تربیت دی ہے وہ یہ ہے کہ جب کوئی آپ سے مختلف بات کرے ، اختلاف کرے یا آپ کی کسی بات پہ تنقید کرے ۔ تو سب سے بڑھ کر اس کی بات سنئے۔ اس لیے کہ ہو سکتا ہے کہ آپ کسی غلطی پر ہوں اور وہ آپ کا محسن ہو اور وہ آپ کو اس غلطی سے نکالنا چاہتا ہو۔

Counter Question Comment
You can post a counter question on the question above.
You may fill up the form below in English and it will be translated and answered in Urdu.
Title
Detail
Name
Email


Note: Your counter question must be related to the above question/answer.
Do not user this facility to post questions that are irrelevant or unrelated to the content matter of the above question/answer.
Share |


Copyright Studying-Islam © 2003-7  | Privacy Policy  | Code of Conduct  | An Affiliate of Al-Mawrid Institute of Islamic Sciences ®
Top    





eXTReMe Tracker